Monday, June 17, 2024
Chatra News

وقت کی قدر دانی ہی کامیابی کی شاہ کلید ہے:مفتی نذر توحید

جامعہ رشیدالعلوم چترا میں ماہانہ امتحان کے نتائج کا اعلان،ممتاز طلبہ کے درمیان نقد انعامات تقسیم

چترا(نامہ نگار)جھارکھنڈ کی معروف و مرکزی درس گاہ جامعہ رشید العلوم چترا میں ماہ جمادی الاولیٰ 1445ھ کے ماہانہ امتحان کے نتائج کا اعلان اور ممتاز طلبہ کے درمیان تقسیم انعامات کی تقریب کا انعقاد جامعہ کے مہتمم و شیخ الحدیث مفتی نذر توحید المظاہری کے زیر صدارت مولانا رحمت مسجد میں کیا گیا۔
صدر مجلس نے کہا کہ اب آپ کے سالانہ امتحان کی ععنقریب آمد آمد ہے۔لہٰذا ماہانہ امتحان کے نتائج کی روشنی میں اپنی محنت و جانفشانی کا ہدف طے کیجیے۔اگر آپ نے اپنے درجے میں امتیازی نمبرات حاصل کیے ہیں تو اسے باقی رکھنے کےلیے کمربستہ ہو جائیے،اور اگر ایسا نہیں ہو سکا تو ابھی سے یہ طے کر لیجیے سالانہ امتحانات میں آپ نمایاں کامیابی حاصل کریں گے۔انہوں نے امتیازی نمبرات سے کام یاب ہونے والے طلبہ کی کد و کاوش،محنت و کوشش اورجہد و سعی کو جہاں سراہا،وہیں کوئی نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ نہ کر پانے والے طلبہ کو بھی حوصلہ دیتے ہوئے کہا کہ:
گرتے ہیں شہسوار ہی میدانِ جنگ میں
وہ طفل کیا گرے جو گھٹنوں کے بل چلے
انہوں نے درس نظامی میں شامل عربی ادب کی مشہور کتاب مقامات حریری کے حوالے سے ایک سطر نقل کی کہ “عند الامتحان،یکرم الرجل او یہان”(امتحان یا تو عزت افزائی کا سبب بنتا ہے یا ذلت کا۔)چنانچہ جن طلبہ نے بہر صورت اپنی توجہ درس و مذاکرے پر مرکوز رکھی،تیقظ و بیداری کو حرز جان بنایا اور حاصل شدہ فرصت و وقت کو غنیمت جان کر اس کی قدر دانی کی انہیں توفیق ملی،انہوں نے اس امتحان میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور انعامات حاصل کیے،جس کے نتیجے میں ان کی وقعت میں اضافہ ہوا،ٹھیک ایسے ہی جنہوں نے لایعنی مصروفیات و مشغولیات میں اپنا وقت گزارا اور پڑھنے لکھنے سے پہلو تہی کرتے رہے،آج وہ کف افسوس مل رہے ہیں اور اپنے ہم نشینوں کی نگاہ میں انہیں کوئی مقام حاصل نہیں ہے۔
جامعہ کے صدرالمدرسین و استاذ حدیث مفتی شعیب عالم قاسمی نے طلبہ کومخاطب کرتے ہوئے متعدد قیمتی نصیحتوں سے مستفید کیا،اور ان کے کامیاب مستقبل کی اس شاہ کلید سے آگاہ کیا،جو زندگی کے ہر مرحلے میں ترقی کی راہ پر انہیں رواں دواں رکھنے میں معاونت کرےگی۔
جامعہ کے دفتر تعلیمات سے مولانا اقبال نیر مظاہری نے بتایا کہ درجات حفظ اور ابتداء فارسی تا سال سوم عربی کے ماہانہ امتحانات بابت جمادی الاخریٰ 1445ھ کا انعقاد 13,14 جمادی الاخریٰ 1445ھ کو کیا گیا۔ابھی جس کے نتائج کا اعلان کیا گیا ہے۔اس امتحان میں اول پوزیشن کےلیے %60 یا اس سے زائد،دوم کےلیے %50 یا اس سے زائد اور سوم کےلیے %45 یا اس سے زائد نمبرات لانے لازمی تھے۔انہوں نے مزید معلومات فراہم کرتے ہوئے کہا کہ کامیاب طلبہ کو دیئے گئے انعامی رقم کی تفصیل اس طرح ہے:اول پوزیشن کےلیے 500روپے،دوم کےلیے 300 روپے اور سوم پوزیشن کےلیے 200 روپے دیئے گئے،نیز درجات حفظ کی ہر درس گاہ کے اول آنے والے کو 300،دوم آنے والے کو 200 اور سوم آنے والے کو ایک سو روپے بطور انعام دیئے گئے۔
ان کے علاوہ ابتداء فارسی تا عربی سوم،تمام درجات میں امتیازی نمبرات سے کام یاب ہونے والے ممتاز طالب علم کو اول انعام کے ساتھ ساتھ مزید 500 روپے بطور امتیازی انعام دیئے گئے۔ساتھ ہی سب سے ممتاز طالب علم کی حوصلہ افزائی کےلیے حضرت مہتمم صاحب نے اپنی جیب خاص سے 500 روپے کے تشجیعی انعام سے نوازا۔
مزید انہوں نے بتایا کہ اجراء عربی وفارسی(ترتیب:ب) کے طالب علم محمد توصیف(رانچی) %97.00فی صد نمبرات حاصل کرکے سب سے ممتاز رہے،جن کی انعامی رقم مجموعی طور پر 1500 روپے رہی۔
انہوں نے تمام درجات کے کام یاب ہونے والے طلبہ کے نام مع پوزیشن کے جو تفصیلات دیں،وہ یہ ہیں:درجہ عربی سوم میں محمد علی(سونرو،چترا)اول،ریحان فضل(لوہردگو)دوم اور محمد سالم ظفر(پرسونی،چترا)سوم رہے۔درجہ عربی دوم (ترتیب الف) میں علقمہ بشیری(پرسونی،چترا)اول،محمد احسان عالم(روم گڑھ)دوم،اور محمد مظفر انصاری(رانچی)سوم رہے۔عربی دوم (ترتیب:ب)میں عدنان ثاقب(گریڈیہہ)اول،سلطان(بردوان))دوم،اور محمد محمد شاہد(لوسنگھنا،چترا)سوم رہے۔عربی اول میں محمد ابوبکر (نوادہ) دوم اور محمد ظفر(ہزاریباغ)سوم رہے۔اول پوزیشن کےلیے مطلوبہ اصول پر پورا نہ اترنے کی وجہ سے اس پوزیشن سے یہ درجہ خالی رہا۔
حفاظ کےلیے مختص درجہ اجرائے عربی و فارسی(ترتیب:الف) میں محمد سلمان حسن(چترا)اول،انعام الانصاری(گریڈیہہ)دوم،اور محمد انصار(اسلام پور،چترا)سوم رہے۔اجرائے عربی و فارسی(ترتیب:ب)میں محمد توصیف(رانچی)اول،آفتاب عالم(رانچی)دوم،اور محمد عبدالسلام (گیا)سوم رہے۔اجرائے عربی و فارسی(ترتیب:ج)میں ابوشحمہ(گریڈیہہ)اول،محمد امتیاز عالم(گڈا)دوم اور محمد ثمیر(چترا)سوم رہے۔ابتدائے فارسی میں تنزیل الرحمان (گملا)اول رہے،جب مطلوبہ معیار پر پورا نہ اترنے کی وجہ سے دوم و سوم پوزیشن خالی رہی۔
درجات حفظ میں قاری محمد توصیف رشیدی کی درس گاہ سے محمد حنظلہ(مورپا،لاتیہار)اول،محمد دانش(چترا)دوم،اور حنظلہ اطہر(چترا)سوم رہے۔قاری سلیم اختر رشادی کی درس گاہ سے واجد اکرم (بادم،ہزاریباغ)اول،محمد ندیم(ڈمول،چترا)دوم اور محمد احمد(چترا)سوم رہے۔حافظ اسلام رشیدی کی درس گاہ سے عرباض عالم(نیپال)اول،محمد عیان(چترا)دوم اور محمد سعد(سمریا،چترا)سوم رہے۔
تقسیم انعامات کی اس تقریب میں مولانا آفاق عالم المظاہری،مولانا شعیب اختر المظاہری،مفت ضیاء الحق قاسمی،مفتی عباداللہ المظاہری،مولانا و حافظ حبیب اللہ القاسمی،مفتی دل شاد المظاہری،مولانا عبدالغفور رشیدی،مولانا محمد احرار قاسمی مظاہری،مولانا محمد اسامہ صادق المظاہری،مولوی عزیر عالم رشیدی،مولانا عبدالغفور رشیدی،مفتی غلام سرور المظاہری،مفتی عمار القاسمی،مفتی احمد بن نذر، مفتی محمد بن نذر رشیدی ندوی،مولانا وصی اللہ مظاہری و دیگر اساتذۂ کرام بھی موجود تھے۔

Leave a Response